روایت

rawaayat1

قسم ہے دوڑتے گھوڑوں کے سم سے پھوٹتی چنگاریوں کی
سروں کو کاٹتے ، شانوں کو ان کے بوجھ سے آزاد کرتے شاہسواروں کی
جو اپنی ڈھال پر دشمن کی تلواروں کی چوٹوں کو
ہتھیلی کی لکیروں کی طرح پہچانتے ہیں
قسم ہے ایسے نیزوں کی جو اپنی ہی انی کے بوجھ کے نیچے لچکتے ہیں
قسم اس خاک کی جو جنگ کے میدان میں اڑ کر زرہ کا زنگ بنتی ہے
قسم اس خوف کی جو موت سے پہلے کسی عارض کا روغن چاٹ جاتا ہے
قسم اس موت کی جوزندگی کی آنکھ میں دیکھے تو اس کو زرد کر دے
قسم رب کی
اور اس سب کی جسے اس پالنے والے نے پالا ہے
ہمیں اس جنگ سے کس دن مفر تھا
مگر یہ کہ
عباؤں میں تمہارا اپنی تلواریں چھپانا
اور سجدوں میں ہمارا قتل ہو جانا روایت ہے

سلمان حیدر

Tags: , , , , , , ,

Leave a Reply

Your email address will not be published.